قیامت کے آخری علامات از مولانا محمد علاء الدین قاسمی 109

قیامت کے آخری علامات از مولانا محمد علاء الدین قاسمی

قیامت کے آخری علامات از مولانا محمد علاء الدین قاسمی

اس کتاب میں قیامت کے قیام سے پہلے رونما ہونے والی کچھ حتمی نشانیاں درج کی گئی ہیں جن میں قیامت کی آخری نشانی یعنی سورج کا مغرب سے طلوع ہونا یا دابۃ الارض(The Beast of Earth) کا نکلنا شامل ہے۔ اس کے بعد توبہ کا دروازہ بند ہو جائے گا، مومن مومن رہ جائے گا اور کافر کافر ہی رہ جائے گا۔ سب کو وقت سے پہلے تیاری کرنی چاہیے۔

قیامت کی نشانیوں کے بارے میں چھوٹی بڑی ہر قسم کی کتابیں لکھی گئی ہیں۔ علماء کی بے شمار کتابیں اسلامی کتب خانوں کی زینت بنی ہے، لیکن اسلام پر قلم کی کاوشیں استعمال کرنا کسی طور بھی بے فائدہ نہیں۔ خاص طور پر اللہ تعالیٰ کی طرف سے جب مخلوق کے فائدے اور انسانی رہنمائی کے لیے کوئی صالح یا فائدہ مند خیال دل میں ڈالا جائے تو اس کا فائدہ مخصوص ہے کیونکہ اللہ کی رضا کے لیے ہر عمل بابرکت اور فائدہ مند ہوگا۔

موجودہ دور کے نامساعد حالات اور افسوسناک مناظر کے پیش نظر مصنف کے دل میں یہ بات ڈالی گئی کہ کچھ مضامین مخلوق کی بھلائی اور نوع انسانی کی نصیحت و رہنمائی کے لیے لکھے جائیں۔ ان میں امید، ریاست اور خدمت کا جذبہ پیدا ہو اور رخصتی کے وقت سے پہلے ہر شخص دکھ درد سے نجات اور فکر و فکر اور آخرت کی تیاری کی طرف ذہن موڑ کر عملی کاموں میں لگ جائے۔ اسی مقصد کے پیش نظر چند احادیث کا مختصر انتخاب آپ کی خدمت میں پیش ہے۔

ان کا عقائد سے بھی لازمی تعلق ہے، حضرت مہدی کا آنا، دجال کا ظہور اور حضرت عیسیٰ علیہ السلام کا نزول وغیرہ، جتنی نشانیاں اس کتاب میں مذکور ہیں۔ ، ہم ان سب کے ذمہ دار ہیں۔ عقیدہ اور یقین کہ وہ ثقہ ہیں اور ان کا ظہور بھی مستند ہے۔

زیادہ تر علاماتِ قیامت سے متعلق احادیث سے استدلال کے بغیر بیان کیے گئے ہیں، یا ان کے حوالہ جات صحیح نہیں دیے گئے ہیں، اس لیے لوگوں نے ان کو نظر انداز کر دیا، یا وہ اپنے دل و دماغ پر توجہ نہ دے سکے، اور غفلت برتتے چلے گئے۔ فراموشی کی سردی میں، جس کی بنیادی وجہ یہ تھی کہ ان کا کم استعمال کیا گیا۔ بعید و بعید اور بہت بعید مستقبل سے مربوط ہونے کی وجہ سے انہیں ناقابل معافی سمجھا جاتا تھا، حالانکہ یہ تمام واقعات حدیث کی کتابوں میں درج ہیں۔

لہٰذا قارئین سے گزارش ہے کہ ان سے بھرپور استفادہ کریں، ان کی روشنی میں اپنا اور اپنے بچوں کا مستقبل روشن اور پروان چڑھائیں، امت کی کامیابی اور نجات کے لیے ابھی سے ایک مربوط اور منظم کوشش کا آغاز کریں، اور پرامن زندگی کا راز حقیقی معنوں میں خدا اور اس کے مذہب کے ساتھ مکمل تعلق استوار کرنے میں مضمر ہے۔
اللہ تعالیٰ ہماری اس عاجزانہ کاوش کو قبول فرمائے اور ہمیں آخرت میں نجات عطا فرمائے اور ہم سب کو آنے والی آفات و تکالیف سے نجات عطا فرمائے تاکہ ہمارے لیے آخرت کی تمام منازل تک رسائی آسان ہوجائے۔

یہاں سے ڈاؤنلوڈ کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں