میری زات زرہ بے نشاں ناول از عمیرہ احمد 475

میری زات زرہ بے نشاں ناول از عمیرہ احمد

اردو ناول “میری زات زرہ بے نشاں‌” تحریر عمرہ احمد

میری زات زرہ بےنشان ایک ایسی عورت کی کہانی ہے جو ایمان ، وفاداری اور معافی کے درمیان پھنسی ہوئی ہے۔ صبا نے اپنے والدین کی خواہش کے خلاف عارفین سے شادی کی ہے۔ صبا سے محبت ہونے کے باعث ، عارفین اپنے اندر روحانیت کا ایک عجیب اور ناقابل فہم احساس محسوس کرتاہے۔ اپنے والدین کی ناراضگی کے باوجود وہ اپنی زندگی سے خوش اور مطمئن ہیں۔ اپنی نفرت سے مغلوب ہوکر عارفین کی ماں صبا کو بدنام کر کے اس سے چھٹکارا پانے کا ارادہ رکھتی ہے۔ جبکہ صبا برداشت ، رواداری اورخدا پر غیرمتزلزل یقین سے اُس کی سازشوں سے خود کو بچانے کی کوشش کرتی ہے ۔ جھوٹا غرور ، ظلم اور ندامت وہ سب موضوعات ہیں جو اس طاقتور کہانی کو مضبوط رنگ دیتے ہیں۔ یہ کہانی پہلی بار خواتین ڈائجسٹ میں شائع ہوا تھا۔
عمیرہ کی کہانیاں اکثر سماجی شعبے کے انتہائی سرے کی نمائندگی کرتی ہیں۔ انہوں نے اس ناول میں بھی معاشرے کے تلخ حقائق کو دکھایا ہے۔ اس کہانی سے یہ بھی ثابت ہوتا ہے کہ عورت ہی عورت کی بدترین دشمن ہے۔ ایک عورت اپنے حسد اور نفرت میں حد سے تجاوز کر سکتی ہے کہ وہ کسی اور عورت کی زندگی تباہ کرنے کے لئے مقدس کتاب پر حلف بھی اٹھا لیتی ہے۔ مکمل طور پر اشتعال انگیز اور آنکھیں کھول دینے والی کہانی۔
عمیرہ احمد نے دیباچے کے ساتھ یہ تسلیم کیا کہ اس کی کہانیوں میں واقعی کوئی خاص بات نہیں ہے لیکن بعض اوقات آپ کو عام لوگوں اور ان کی عام زندگی کے بارے میں لکھنا اور پڑھنا پڑتا ہے۔ تاہم ، جس خوبصورت انداز میں وہ اپنے کرداروں کی تصویر کشی کرتی ہے اس سے میرے ذہن میں کوئی شک نہیں رہتا کہ یہ تین کہانیاں خاص کے سوا کچھ نہیں ہیں۔
عمیرہ احمد اردو ادب میں ابھرتی اور مقبول مصنفہ ہیں۔ اس نے 1998 میں لکھنا شروع کیا تھا اور اب تک تقریبا 35 ناولز لکھ چکی ہے۔ ان میں سے کچھ بہت مشہور ہو گئے جیسے پیر کامل ، آب حیات ، لاحاصل ، زندگی گلزار ہے اور ہم کہاں کے سچے تھے۔ اپنی مقبولیت کی وجہ اب وہ قابل ذکر اردو ناول نگار سمجھی جاتی ہیں۔ ان کے ناول اردو کے ماہانہ ڈائجسٹوں میں شائع ہوتےرہتے ہیں۔ یہاں تک کہ اس کے ناول اور کہانیوں پر ٹی وی ڈرامے بھی پیش کئے جاتے ہیں جسے چھوٹے بڑے سب بہت شوق سے دیکھتے ہیں ۔ اس کے ناول بنیادی طور پر روحانیت ، محبت کے جذبات اور انسانیت پر مبنی ہوتے ہیں۔ مصنفہ نے لکس ایوارڈ بھی حاصل کیا ہے۔

یہاں سے ڈاؤنلوڈ کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں