سفر شمال کے از مستنصر حسین تارڑ 80

سفر شمال کے از مستنصر حسین تارڑ

سفر شمال کے سفرنامہ از مستنصر حسین تارڑ

سفر شمل کے مستنصر حسین تارڑ کا ایک مسحور کن سفرنامہ ہے جو پاکستان کے شمالی علاقوں کے شاندار قدرتی حسن کی تصویر کشی کرتا ہے۔ کتاب سے پتہ چلتا ہے کہ مصنف فطرت کی خوبصورتی کو تلاش کرنا اور سفر کے بارے میں لکھنا کتنا پسند کرتا ہے۔ مستنصر حسین تارڑ اپنی واضح بیانیہ انداز کے ساتھ قارئین کو شمال میں پاکستان کی بے مثال خوبصورتی کو تلاش کرنے کے سفر پر لے جاتے ہیں۔

کتاب ایڈونچر، مزاح، اور قدرتی خوبصورتی کا حسین امتزاج ہے۔ مصنف شمال کی پوشیدہ وادیوں، اونچے پہاڑوں اور شفاف جھیلوں کی تلاش میں اپنی مہم جوئی کے احوال بیان کرتا ہے۔ مقامی ثقافت، رسم و رواج اور روایات کے بارے میں ان کے مشاہدات کتاب میں ایک منفرد ذائقہ ڈالتے ہیں۔ مستنصر حسین تارڑ کی غیر معمولی صلاحیت قارئین کو اپنے سفر کا حصہ محسوس کراتی ہے۔

کتاب سفر شمال کے کئے ابواب پر مشتمل ہے، اور ہر باب مصنف کے سفر کے مختلف حصے کے بارے میں بتاتا ہے۔ درہ خیبر سے لے کر شاہراہ قراقرم کے سفر تک، مصنف نے اپنے سفر کے تجربات بیان کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ وہ بلتت قلعہ، شندور پولو گراؤنڈ، اور وادی ہنزہ جیسے تاریخی مقامات کی تاریخ اور اہمیت بھی دریافت کرتا ہے۔

کتاب کا سب سے نمایاں پہلو مصنف کی شمالی علاقہ جات کے لوگوں سے گہری محبت ہے۔ وہ ان کی سادگی، مہمان نوازی اور گرمجوشی کو خوبصورتی سے پیش کرتا ہے۔ یہ کتاب شمالی علاقوں کے لوگوں کی حوصلے اور جانفشانی کو خراج تحسین پیش کرتی ہے، جو صدیوں سے مشکل ترین ماحول میں زندگی گزار رہے ہیں۔

مصنف کا طرز تحریر اور شمالی علاقہ جات کے قدرتی حسن کے بارے میں اس کی تفصیلات دلکش ہیں۔ وہ اپنے الفاظ کے ذریعے مناظر کو زندہ کرتا ہے۔ نانگا پربت کی بلند و بالا چوٹیوں سے لیکر جھیل سیف الملوک کے صاف شفاف پانیوں تک، مصنف کی تفصیل قارئین کو ایسا محسوس کراتی ہے جیسے وہ اپنی آنکھوں سے ان مناظر کو دیکھ رہے ہوں۔

مستنصر حسین تارڑ ایک ماہر کہانی کار ہیں، اور ان کی ذہانت اور مزاح کا منفرد انداز قاری کو اپنی طرف متوجہ کرتی ہے۔ مقامی لوگوں سے اس کی ملاقاتیں اور شمال کی کچی سڑکوں پر سفر کے تجربات کو مزاحیہ اور دلفریب انداز میں بیان کیا گیا ہے۔ مصنف کا مزاحیہ احساس کتاب کو لذت بخش بناتا ہے، اور قارئین اس کے مزاحیہ تبصروں پر بے اختیار ہنسنے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔

سفر شمال کے سفری تحریر کا شاہکار ہے۔ یہ کتاب پاکستان کے شمالی علاقہ جات کی قدرتی خوبصورتی کو اپنی گرفت میں لیتی ہے اور ان لوگوں کی ثقافت اور روایات کو اجاگر کرتی ہے جو ان علاقوں کو اپنا گھر کہتے ہیں۔ مستنصر حسین تارڑ نے شمال میں سفر کے اپنے تجربات وہاں کے لوگوں اور مناظر سے اپنی محبت کے ساتھ خوبصورتی سے بُنایا ہے۔ کتاب مصنف کے سفری تحریر کے جذبے کا ثبوت ہے۔ یہ ہر اس شخص کے لیے پڑھنا ضروری ہے جو پاکستان کے شمالی علاقہ جات کی خوبصورتی کو دیکھنا چاہتا ہے۔

مختصراً، سفر شمال کے ایک دلکش سفرنامہ ہے جو قارئین کو پاکستان کے شاندار قدرتی حسن کو دکھاتا ہے۔ مصنف کا بیانیہ اسلوب، واضح بیانات، اور مزاح کا احساس کتاب کو اور بھی دلکش بنا دیتا ہے۔ مستنصر حسین تارڑ کی شمالی علاقہ جات کے لوگوں اور مناظر سے محبت کتاب کے ہر صفحے پر عیاں ہے۔ کتاب ایڈونچر، مزاح، اور قدرتی خوبصورتی کا امتزاج ہے۔ یہ ہر اس شخص کے لیے پڑھنا ضروری ہے جو پاکستان کے شمالی علاقوں کی خوبصورتی کا تجربہ کرنا چاہتا ہے۔

اردو سفرنامہ کی کتاب “صفر شمال کے” اب پاکستان کی ورچوئل لائبریری میں ہمارے زائرین کے مطالعہ کے لیے ایک اعلیٰ معیار کی پی ڈی ایف دستاویز میں دستیاب ہے۔ آن لائن پڑھنے کے لیے درج ذیل لنکس کو دیکھیں یا اپنے کمپیوٹر اور اسمارٹ فون پر آف لائن پڑھنے سے لطف اندوز ہونے کے لیے مکمل کتاب کو پی ڈی ایف فارمیٹ میں ڈاؤن لوڈ کریں۔

ڈاونلوڈ کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں