سرسراہٹ ناول از محمدفاروق انجم 56

سرسراہٹ ناول از محمدفاروق انجم

سرسراہٹ مکمل ناول از محمدفاروق انجم

“سرسراہٹ” ایک دہشت ناک اور رونگٹے کھڑے کردینے والی شاہکار کہانی ہے۔ یہ کہانی سب سے پہلے “ڈر ڈائجسٹ ” میں قسط وار شائع ہوئی تھی اور اس نے قارئین میں بے پناہ مقبولیت حاصل کی تھی۔ “سرسراہٹ” ایک سنسنی خیز ناول ہے، جو اس ایکشن سے بھرے ایڈونچر میں کالے جادو، دوسری دنیاوی مخلوقات، شیطانی طاقتوں اور انسانیت کی اٹوٹ روح کی دنیا کو تلاش کرتا ہے۔
“سرسراہت” انسانی روح کے اندر رہنے والی تاریک ترین خامیوں سے پردہ اٹھاتا ہے – لالچ، حرص، غصہ، انتقام، اور ظلم کی پیچیدہ داستان کے ذریعے، فاروق انجم قارئین کو انسانی خواہشات کے اتھاہ گہرائیوں میں لے جاتے ہیں اور ان کے خوفناک نتائج جن سے وہ جنم لے سکتے ہیں۔
کہانی ایک حیرت انگیز طور پر خوبصورت نوجوان عورت کے گرد گھومتی ہے جو زمین اور اس کے باشندوں پر حکمرانی کرنے کی غیر متزلزل خواہش کا شکار ہے۔ وہ اپنے عزائم کو پورا کرنے کے لیے ایک خطرناک سفر پر نکلتی ہے، اپنے آپ کو براہ راست بدروحوں اور خطرناک جادوگروں کے راستے میں ڈالتی ہے جو کالا جادو کرتے ہیں اور خفیہ طور پر کام کرتے ہیں۔
لیکن جو چیز “سرسراہت” کو الگ کرتی ہے وہ کالے قوتوں کے لیے اس لڑکی کا مقناطیسی رغبت ہے۔ وہ شطرنج کے شیطانی کھیل میں ایک اہم پیادہ بن جاتی ہے، جس نے ایک نہیں بلکہ دو طاقتور جادوگروں کی توجہ اپنی جانب مبذول کرائی جو اس کے لیے موت تک لڑنے کو تیار ہیں۔
جادو منتر اور کالے علم کے سمندر میں غوطہ زن یہ کہانی حقیقت پر مبنی ہے۔ خودغرضی اور مطلب پرستی کا بھوت جب انسان کے سر پر سوار ہوتا ہے تو وہ انسان اپنے سارے قلبی رشتوں بلکہ اپنی ذات تک کو فراموش کرکے ناقابلِ یقین اور لہولہان منصوبہ بناتے ہوئے بھی ہچکچاتا نہیں۔
خاندانی شرافت ، رسم و رواج، ایمان و شریعت اور فرمانِ الٰہی تک کی دھجیاں بکھیر کر رکھ دیتا ہے۔ اس کسی بھی رشتے کا احساس نہیں ہوتا۔ سوائے اپنی خودغرضی اور من مانی کے۔ وہ ایسے ایسے طلم و ستم اور تحیرانگیز پلان مرتب کرتا ہے کہ گردوپیش کی انسانیت اور آنے والی نسلیں تک تھرا اُٹھتی ہیں۔ ماخول چیخ پڑتا ہے، فضائیں ماتم کناں ہوجاتی ہیں، نگاہیں حیرت کی تصویر بن جاتی ہیں اور جسم و جان پر جیسے سکتہ طاری ہوجاتا ہے۔ ہر چیز اس کی خونی خواہش کی بھینٹ چڑھ جاتی ہے۔
عشق و محبت کی شاداب وادی میں اٹکھیلیاں کرتی، خلوص کے پالنے میں جھولتی ہوئی، ماورائی مخلوق اور جادوئی دنیا کی تحیر انگیز، انسانی سوچ کو خوف و دہشت کے شکنجہ میں جکڑتی ، جسم وجاں پر لرزہ طاری کرتی ، ذہن سے محو نہ ہونے والی ایک ناقابلِ فراموش داستانِ حیرت، جس نے لوگوں کو انگشتِ بدندداں کردیا اور حرص و لالچ کا پہاڑ ریزہ ریزہ ہوکر رہ گیا۔
ہر عروج کو زوال ہوتا ہے۔ اس صورت میں جب انسانیت سسکنے لگتی ہے، لوگوں کی اذیت ناک حالت دگر گوں ہوجاتی ہے اور معصوم لوگوں کی متلاشی نگاہیں فریاد کے لئے آسمان کی وسعتوں میں یاس و محرومی کی حالت میں قدرت کے اقدام کی تلاش میں ٹک جاتی ہیں تو پھر۔۔۔
جادوئی اور کالے علم کی یہ حقیقی کہانی انسانی جبلت پر سے پردہ اُٹھاتی ہے تو مجسم انسان تھرا کر رہ جاتا ہے اور خیالوں کی اتھاہ گہرائی میں لڑھکتا ہوا نیچے چلاجاتا ہے۔ یہ کہانی مصنف کے زورِ قلم کی واقعی شاہکار کہانی ہے جسے پڑھ کر قائین مدتوں اسکے سحر سے شاید نہ نکل سکے۔

یہاں‌سے حاصل کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں