آبِ گم از مشتاق احمدیوسفی

کتاب آبِ گم تحریر مشتاق احمدیوسفی صاحب مرحوم

آبِ گم کے بارے میں کیا لکھا جائے کہ اس کتاب کے بارے میں جاننے کے لیے اس کو پڑھنا ضروری ہے۔ یہ کتاب مشتاق احمد یوسفی کی آپ بیتی بھی ہے، طنز و مزاح کا شاہکار بھی ہے۔ اس کتاب کے مزاحیہ جملے پڑھ کر انسان بے حساب ہنستا ہے، اور جب ہنس ہنس کر بے حال ہوجاتا ہے تو یوسفی صاحب اچانک ہی ایسا سماں باندھ دیتے ہیں کہ قاری سوچتا رہ جاتا ہے آیا یہ کتاب مزاحیہ ادب کا شاہکار ہے یا سنجیدہ ادب کا۔
اس مجموعے کے بیشتر کردار ماضی پرست، ماضی زدہ اور مردم گزیدہ ہیں۔ ان کا اصل مرض ناسٹلجیا ہے۔ جب انسان کو ماضی، حال سے زیادہ پرکشش نظر آنے لگے اور مستقبل نظر آنا ہی بند ہو جائے تو باور کرنا چاہیے کہ وہ بوڑھا ہو گیا ہے۔ یہ بھی یاد رہے کہ بڑھاپے کا جوانی لیوا حملہ کسی بھی عمر میں – بالخصوص بھری جوانی میں – ہو سکتا ہے۔۔۔ غور سے دیکھا جائے تو ایشیائی ڈرامے کا اصل ولن ماضی ہے۔۔۔ پاستان طرازی کے پس منظر میں مجروح انا کا طاؤسی رقص دیدنی ہوتا ہے کہ مور فقط اپنا ناچ ہی نہیں، اپنا جنگل بھی خود ہی پیدا کرتا ہے۔ ناچتے ناچتے ایک طلسماتی لمحہ ایسا آتا ہے کہ سارا جنگل ناچنے لگتا ہے اور مور خاموش کھڑا دیکھتا رہ جاتا ہے۔ ناسٹل جیا اسی لمحۂ منمجمد کی داستان ہے۔
نشۂ ماضی میں سرمست ایک مفلوک الحال مگر مغلوب الغضب از کار و از خود رفتہ دکاندار۔ ایک مفلوج اور دل گرفتہ ضعیف آدامی اور اس سے بھی زیادہ گھائل اس کا تنہا ساتھی ۔۔۔ ایک زخمی اور دکھی گوڑا مغل بادشاہوں کے ہم نام ننگ دھڑنگ بچوں کے ساتھ جھگی میں رہنے والا منشی۔ حجت اور محبت کرنے والا دیو ہیکل پٹھان آڑھتی اور ہر فن مست مولا حجام۔ چھوٹے سے کمرے میں پچھتر سال گزار دینے اور کبوتروں اور چڑیوں کو دسراتھ اور بدھ کی مورتیوں میں نروان ڈھوندنے والا سنکی۔ اپنے سنہری دور ماتحتی کی یاد میں گم ایک ضعیف چپراسی۔۔۔ میں نے زندگی کو، اور اپنے آپ کو، ایسے ہی افراد و حوادث کے حوالے سے جانا پہچانا اور چاہا ہے۔ یہ ایسے ہی عام اور درماندہ لوگوں کا تذکرہ ہے جو اپنی ساخت، ترکیب اور دانستہ و آراستہ بے ترتیبی کے اعتبار سے مونتاژ اور پھیلاؤ اور فضا بندی کے لحاظ سے ناول سے زیادہ قریب ہے۔
میری نظر میں یہ کتاب اردو میں لکھی جانے والی بہترین کتاب ہے جو بڑے بڑے شاہکار و بیسٹ سیلر ناولوں پر بھاری ہے۔ آپ اس کو آپ بیتی جان کر پڑھیں یا جگ بیتی، یا پھر فکشن، یہ ہر صورت میں بہترین کتاب ہے.
کتاب کے مصنف مشتاق احمد یوسفی صاحب آج اس جہان فانی سے کوچ کر گئے ہیں.اللہ تعالیٰ اُن کو اپنی جوارِ رحمت جگہ عطافرمائیں. کتاب آبِ گم ان کو خراج تحسین پیش کرنے کے لئے پاکستان ورچوئل لائبریری کے قارئین کے مطالعہ کے لئے ڈاؤنلوڈ کی سہولت کے ساتھ آنلائن پیش کی جارہی ہے. ڈاؤنلوڈکرنے کے لئے ذیل میں موجود ڈاؤنلوڈ لنک سے استفادہ کریں. شکریہ!

یہاں سے ڈاؤنلوڈکریں

اپنا تبصرہ بھیجیں