بات عمر بھر کی ہے ناول از عمیرہ احمد 344

بات عمر بھر کی ہے ناول از عمیرہ احمد

اردو ناول “بات عمربھر کی ہے” تحریر عمیرہ احمد

بات عمر بھر کی ہے مومنہ اور سنبل کی کہانی ہے۔ یہ ماں بیٹی یکساں مسائل کے ساتھ دو بالکل مختلف شخصیتیں ہیں۔ مومنہ خوبصورتی سے بھرپور خاندان میں کسی بدصورت بطخ کی طرح ہے ۔اس کی ساری زندگی انتہائی احساسِ کمتری میں گزری ہے اور اس کی شخصیت اس کی کم خود اعتمادی سے بری طرح متاثر ہوئی ہے جو اس کے آس پاس کے لوگوں کو غیر مشروط آزادی دیتی ہے کہ وہ اسے گالیاں دیں اور اس کی توہین کریں۔ دوسری طرف اُس کی بیٹی سنبل ہے جو خود اعتمادی ، عقل اور ذہانت کی ایک بہترین مثال ہے۔ اسے مومنہ کی جسمانی خصوصیات وراثت میں ملی ہیں لیکن وہ خود کو درپیش ہر مسئلے سے نمٹتی ہے اور اسی وجہ سے وہ وقار اور عزت نفس کے ساتھ زندہ رہتی ہے۔
عمیرہ احمد نے اپنی کہانی میں دو خواتین کی مثال دکھائی ہے جو آپس میں‌مان اور بیٹی ہیں۔ مومنہ ، جو اپنے آپ کو کمتر سمجھنے کا انتخاب کرتی ہے اور خوبصورت لوگوں کو امر انسانوں کی طرح دیکھتی ہے جنہیں چھوا نہیں جا سکتا۔ وہ اپنے آپ کو بھول جاتی ہے اور اپنے بداخلاق شوہر کو خوش کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑتی۔ کچھ لوگ اسے بیچاری کے طور پر دیکھتے ہیں۔ دوسری طرف اس کی بیٹی سنبل ہے ، جو اپنی ماں کے بالکل برعکس ہے ، جب اس کے حقوق کی بات آتی ہے تو اپنے حق کے لئے ڈت جاتی ہے اور اپنے سر کو بلند رکھتے ہوئے زندگی گزارنے کی خواہشمند ہے۔ دونوں عورتوں کو سیاہ فام ہونے کے طور پر بیان کیا گیا ہے۔ مصنف نے ایک طاقتور موازنہ کے ذریعے اپنی بات ثابت کی۔
آج مسلمانوں کامسلہ یہ ہے کہ وہ صرف جنسی زیادتی، شراب یا کسی کو قتل کرنا ہی گناہ سمجھتے ہیں۔جبکہ غیبت کرنا ، جھوٹ بولنا ، غیر منصفانہ امتیازات وغیرہ کو گناہ ہی نہیں سجھتے حالانکہ یہ بھی اتنے ہی بڑے گناہ ہیں۔ لوگ اس بات کو سمجھنے میں ناکام ہیں اور اکثر اسے نظر انداز کرتے ہیں۔ بات عمر بھرکی ہے، مختلف رویوں اور یکساں حالات میں ان کے نتائج کا بہترین موازنہ کرتی ہے۔ یہ قاری کو خود آگاہی کی طرف ایک جدید نقطہ نظر فراہم کرتا ہے۔ یہ ناول سب سے پہلے خواتین ڈائجسٹ میں شائع ہوا تھا اور ابکتابی شکل میں دستیاب ہے۔

یہاں‌سے ڈاؤنلوڈ کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں