بیدل از خواجہ عباداللہ اختر 35

بیدل از خواجہ عباداللہ اختر

بیدل سوانح حیات از خواجہ عباداللہ اختر

خواجہ عباد اللہ اختر کی کتاب بیدل مشہور فارسی شاعر ابوالمعانی مرزا عبدالقادر بیدل دہلوی عظیم آبادی کی زندگی، شاعری اور فلسفے پر ایک جامع تصنیف ہے۔ ادارہ تحفظِ اسلامیہ لاہور نے یہ کتاب 1961 میں شائع کی۔ کتاب اردو میں لکھی گئی ہے اور 404 صفحات پر محیط ہے۔

مصنف بیدل کی زندگی اور کام کے بارے میں تاریخی سیاق و سباق فراہم کرتے ہوئے شروع کرتا ہے۔ وہ بیدل کی پیدائش 1054 ہجری، 1644 عیسوی میں عظیم آباد، ہندوستان کے صوبہ بہار میں ہونے پر روشنی ڈالتے ہیں۔ مصنف نے بیدل کے نسلی پس منظر، چغتائی ارلاس (برلاس) قوم سے تعلق رکھنے اور اس کے خاندان کا صوفی سلسلہ قادریہ سے تعلق کو بھی نوٹ کیا ہے، لہٰذا غوث الاعظم حضرت عبدالقادر جیلانی کے حوالے سے بیدل کا نام “عبدالقادر” رکھا گیا۔

کتاب میں بیدل کی تعلیم کا ذکر کرتے ہوئے لکھتا ہے کہ اس نے مرزا قلندر سے تصوف کی بنیادی باتیں سیکھیں۔ بعد میں اس نے تقریباً تمام آئمہ کرام سے تصوف کا باقاعدہ علم حاصل کیا۔ تصوف کے علاوہ مصنف نے تحریر کیا ہے کہ بیدل کی شاعری میں فلسفہ اور فکر نمایاں ہے۔ بیدل زندگی، وجودکائنات اور فطرت کے بارے میں ایک منفرد نقطہ نظر رکھتا ہے۔ مصنف مزید کہتا ہے کہ کچھ قارئین کو بیدل کے فلسفیانہ موضوعات مشکل لگتے ہیں، لیکن بیدل خود اپنے کام میں بہت وضاحت فراہم کرتا ہے۔

یہ کتاب بیدل کی زندگی کا ایک جامع سوانحی خاکہ پیش کرتی ہے، جس کا آغاز ان کی “چار عناصر” پر سوانحی بحث سے ہوتا ہے، جو بیدل کے فلسفے کو سمجھنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ مصنف نے بیدل کے بارے میں مبصرین کے خیالات بھی پیش کیے ہیں، جو قارئین کو بیدل کے کام کے بارے میں وسیع تر تفہیم فراہم کرتے ہیں۔

اس کتاب کی سب سے اہم باب بیدل کے کام کا تجزیہ ہے، خاص طور پر مسنویوں، رباعیوں اور دیوان ہر ایک کام پر تحقیقی مواد فراہم کرتا ہے، جو کہ بیدل کی شاعری اور فلسفے کو سمجھنے کے لیے بہت ضروری ہے۔ مصنف نے بیدل کے کام کے بارے میں اپنا تنقیدی تجزیہ بھی پیش کیا ہے، جو کتاب کی علمی قدر میں اضافہ کرتا ہے۔

کتاب کی زبان علمی لیکن قابل رسائی ہے، یہ اسکالرز، طلباء، فارسی شاعری اور فلسفے میں دلچسپی رکھنے والے عام قارئین کے لیے ایک بہترین ذریعہ ہے۔ کتاب اردو میں لکھی گئی ہے جس کی وجہ سے اسے پاکستان اور دیگر اردو بولنے والے ممالک کے قارئین تک رسائی حاصل ہے۔

مجموعی طور پر کتاب “بیدل” فارسی کے بااثر شاعر ابوالمعانی مرزا عبدالقادر بیدل دہلوی عظیم آبادی کا ایک جامع سوانح عمری، اس کے کام کا تنقیدی تجزیہ، اور اس کے مسنویوں، رباعیوں اور دیوان پر قیمتی تحقیقی مواد پیش کرتا ہے۔

اردو کتاب “بیدل” اب پاکستان کی ورچوئل لائبریری میں ہمارے صارفین کے مطالعہ کے لیے ایک اعلیٰ معیار کی پی ڈی ایف دستاویز میں دستیاب ہے۔ آن لائن پڑھنے یا مکمل کتاب کو پی ڈی ایف فارمیٹ میں ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے درج ذیل لنکس کو دیکھیں اور اپنے کمپیوٹر یا اسمارٹ فون پر آف لائن پڑھنے سے لطف اندوز ہوں۔

یہاں‌سے ڈاؤنلوڈ کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں